Home / رمضان سپیشل / اداریہ-۲

اداریہ-۲

طویل اندھیرے کے بعد روشنی کی کرن پھوٹنے لگے، سخت دھوپ کے بعد گھنے بادل چھانے لگیں یا کسی تلاطم کے بعد آسمان صاف ہونے لگے  تو یہ احساس نہایت روح پرور ہوتا ہے۔ کچھ اسی طرح کا احساس ہے کہ گناہوں سے بھری سال بھر کی زندگی کے بعد ایک بار پھر رمضان المبارک رحمتوں اور نیکیوں سے معطر ہوکر ہم پر سایہ فگن ہونے والا ہے۔ اس عمرِ مختصر میں ایک بار رمضان کا لوٹ آنا یقیناً بڑی سعادت ہے۔ اللہ نے ہمیں زندگی میں ایک بار پھر یہ موقع دے رہا ہے کہ ہم خوابِ غفلت سے جاگ کر، شیطان کی بندگی سے آزاد ہو کر اور نفسانیت کے دلدل سے نکل کر اپنے آلودہ نفس کو پاکیزگی کا زیور پہنائیں ۔ اپنی روح کو تقویٰ سے آراستہ کریں،  اسے نیکیوں سے سنواریں اور اخلاق و  حسنات سے مزین کریں۔ ایک بار پھر ہم اُن رحمتوں سے لطف اندوز ہوں جو ہمارے لیے نجات کا شافی سامان رکھتی ہیں۔ ہم جانتے ہیں کہ یہ مہینہ جو سال بھر میں ایمان کی بڑھوتری کے لیے بہترین ٹریننگ  سیشن ہے اور خواہش تو یہ ہم سبھی کی ہے کہ اس رمضان ہم اپنی بخشش کروالیں اور اپنی زندگی کو بدل دیں ، مگر اس خواب کی تعبیر کے لیے محض خواہش ہی کافی نہیں، ارادہ ضروری ہے۔ عزم و استقلال کا وہ رویہ درکار ہے جو ہمیں ڈٹ کر گناہوں کے خلاف کھڑا کردے۔ محض باتیں بہت کی جاسکتی ہیں، مگر اب عمل کا موقع ہے۔ ادارہ اسرا کے زیر اہتمام ’’رمضان کورس‘‘ کا آغاز یکم رمضان سے کردیا جائے گا جس کی تفصیل اسی شمارے میں موجود ہے۔ امیدِ واثق ہے کہ گزشتہ سال کی طرح یقیناً اس سال بھی یہ کورس کئی دلوں میں روحانی انقلاب کا سبب بن سکے گا۔ مگر اس موقع سے اوررمضان کے نیکیوں والے ماحول سے فائدہ وہی اٹھائیں  گے جن کے دل میں واقعی عشقِ الٰہی کے حصول کی سچی تڑپ ہو۔

About حافظ محمد شارق

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *