Home / شمارہ نومبر 2017 / بچوں کی جنسی تربیت

بچوں کی جنسی تربیت

(پانچ سال سے کم عمر بچوں کے لیے)

بعض چھوٹے بچےاپنے  private part کوچھوتے ہیں اور بعض اوقات کھیلتے بھی ہیں اورانجوائے کرتے ہیں۔بچوں کا اس طرح سے کرنا کوئی sexual activity نہیں ہوتی بلکہ یہ نارمل رویہ ہوتا ہے ۔اس طرح سے بچے اپنے جسمانی اعضاء کے متعلق تجسس کو پورا کر رہے ہوتے ہیں اور یہ چیز فطرتا ہر بچے میں موجود ہوتی ہے۔

اگر بچے کو اس طرح سے کرتے دیکھیں توبچے کی توجہ کسی اور طرف لگا دیں ۔ ابتدائی طور پر نظرانداز کریں۔ آواز ،الفاظ اور چہرے کے تاثرات جو کہ بچے کے اس عمل پر آپ استعمال کریں گی وہی بچے کے لئے پہلی جنسیات کی تربیت sex education ہو گا۔ اگر تو آپ بچےکوسختی سے منع کریں گی ڈانٹیں گی یا سزا دیں گی تو اس سے بچے کی دلچسپی sex parts میں مزید بڑھ سکتی ہے اور بچے میں احساس شرمندگی پیدا ہو گی جو اس کی شخصیت کا حصہ بن جائے گی ۔اور اگر neutral ہو کر بچے کو indirect ways میں روکیں گی تو بچہ بھی اس چیز کو روٹین کی روک ٹوک کا حصہ سمجھے گا اور زیادہ دلچسپی نہیں لے گا ۔ وقت کے ساتھ ساتھ چھوٹے بچوں کو sex education دیں۔ جیسے۔۔۔

  • panty صرف private place پر جا کر تبدیل کرتے ہیں۔
  • کسی کو ننگا نہیں دیکھتے۔

    • panty part آپ کا پرائیوٹ پارٹ ہے۔
  • ایک چادر میں دو بچے نہیں لیٹنے ایک چادرصرف ایک بچے کی ہوتی ہے۔
  • پینٹی پہن کر واش روم /سوئمنگ پول میں دوسرے بچوں کے ساتھ نہا سکتے ہیں ورنہ نہیں۔

About عفیفہ بٹ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *