Home / شمارہ اگست 2017 / بے روزگاری کے خلاف جہاد

بے روزگاری کے خلاف جہاد

کئی لوگوں کی طرف سے میسیج آتے ہیں کہ میں انتہائی حساس ترین معاملات میں خاموش رہتا ہوں ۔ مجھے بھی کچھ نہ کچھ لکھنا چاہئے ۔۔ ان کا مشورہ سر آنکھوں پہ ۔۔ اور واقعی سچ ہے کہ میں بہت لکھتا رہا ہوں

میں بچپن ہی سے لکھتا آیا ہوں

ساتویں کلاس میں تھا جب میں نے تحصیلی سطح پہ مقابلہ مضمون نگاری میں اوّل پوزیشن لی

 آٹھویں کلاس میں تھا جب ضلع بھر میں اوّل انعام کا حقدار قرار پایا ، اس وقت نویں کلاس میں تھا جب میری کئی تحریریں ماہنامہ نونہال ، ہفت روزہ تعلیم وتربیت اور ماہنامہ جگنو میں شائع ہونے لگ گئیں تھیں ۔۔

 دسویں تک پہنچتے پہنچتے میرے اندر کا لکھاری بیدار ہوچکا تھا اور میری تحریریں پڑھنے والے جانتے ہیں کہ اس عمر میں بھی میری آڑھی ترچھی لکیروں سے شعور چھلکتا تھا ۔۔

پھر کالج اور مدرسہ کے کئی سال گزرے اور اس دوران بیسیوں عنوانات پہ کہانیاں ، مضامین ، کالم  اور فیچرز لکھ کر میں قلمکار بن گیا ۔

لیکن پھر میں نے یہ لائن ترک کردی اور ملک کے بنیادی مسائل کی طرف دھیان دینا شروع کردیا

باوجود صحافتی پروفیشنل ڈگری

کےآج کل میں سیاست پہ نہیں لکھتا کیونکہ یہ غلاظت کی وہ دلدل ہے جس میں ایک بار پاؤں پھنس  جائے پھر بس دھنستا ہی چلا جاتا ہے

 آج کل میں حالات حاضرہ پہ نہیں لکھتا کیونکہ آج کی نسل کا مسئلہ حالات حاضرہ سے نہیں بے بے روزگاری سے ہے

 میں کرکٹ پہ بھی نہیں لکھتا کیونکہ مجھے اندازہ ہے کہ یہ نوجوان کے مسائل کا حل نہیں صرف ایک ذوق کے لئے باعث تسکین ہے

میں بحث میں بھی نہیں الجھتا کیونکہ کبھی بھی اس سے مسائل حل نہیں ہوئے

 میں مناظروں اور مباحثوں میں ہاتھ نہیں ڈالتا کیونکہ گنجے دانشوروں کی موجودگی میں ایسے معاملات میں الجھنا بذات خود احمقانہ فعل ہے

اس لئے میں نے اپنا موضوع ” بزنس ڈویلپمنٹ ” منتخب کیا ہے

کیونکہ ہمارا سب سے بڑا مسئلہ بے روزگاری ہے

ہماری سب سے بڑی پرابلم ملازمتوں کے لئے در بدر بھٹکتےنوجوان ہیں  اور میری خواہش ہے کہ اس ملک کا ہر جوان برسرروزگار ہو ۔۔

 اور الحمدللّٰہ اسی عزم کے ساتھ میں کام کر رہا ہوں اور کرتا رہوں گا کیونکہ قلمکار وہ ہوتا ہے جو مسائل کی نشان دہی کے ساتھ مسائل کا حل بھی پیش کرے اور وہ میں کر رہا ہوں

 دیکھنا صرف یہ ہے کہ میرے دوستوں میں سے میرے ساتھ کون کون ہے ؟؟

About عبداللہ بن زبیر

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *