Home / 2018 / خصائل  نبوی  صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

خصائل  نبوی  صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

عقیقہ

تحریر:خاور رشید

  1. حضرت ام کرز(رض) فرماتی ہیں کہ میں نے رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) سے عقیقے کے متعلق پوچھا تو انہوں نے ارشاد فرمایا لڑکے کے عقیقے میں دو اور لڑکی کے عقیقے میں ایک بکری ذبح کی جائے خواہ وہ بکرے ہوں یا بکریاں۔   (جامع ترمذی:جلد اول:حدیث نمبر 1568)
  2. حضرت سلمان بن عامرضبی(رض)   سے روایت کیا ہے، انہوں نے بیان کیا کہ میں نے آپ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کو فرماتے ہوئے سنا کہ لڑکے کا عقیقہ کرناضروری ہے، اس کی طرف سے خون بہاؤ اور اس سے تکلیف دور کرو۔ (صحیح بخاری:جلد سوم:حدیث نمبر 450)
  3. حضرت یوسف بن ماہک سے روایت ہے کہ ہم حفصہ بنت عبدالرحمن کے ہاں داخل ہوئے اور عقیقہ کے بارے میں پوچھا انہوں نے فرمایا کہ عائشہ نے انہیں بتایا کہ رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے عقیقے میں لڑکے کی طرف سے ایسی دو بکریاں ذبح کرنے کا حکم دیا جو عمر میں برابر ہوں اور لڑکی کے عقیقے میں ایک بکری ذبح کرنے کا حکم دیا۔ اس باب میں حضرت علی، ام کرز، بریدہ، سمرہ عبداللہ بن عمرو، انس، سلمان بن عامر اور ابن عباس (رض) سے بھی احادیث منقول ہیں (جامع ترمذی:جلد اول:حدیث نمبر 1566)
  4. حضرت سمرہ (رض) سے روایت ہے کہ رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا لڑکا اپنے عقیقے کے ساتھ مرتبط ہے (یعنی رہن ہے) لہذا چاہیے کہ ساتویں دن اس کا عقیقہ کردیا جائے اور پھر اس کا نام رکھ کر سر منڈوایا جائے۔ (جامع ترمذی:جلد اول:حدیث نمبر 1576)
  5. حضرت عبداللہ بن بریدہ سے روایت ہے کہ رسول کریم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے حضرت حسن اور حضرت حسین کی جانب سے عقیقہ کیا۔ (سنن نسائی:جلد سوم:حدیث نمبر 522)
  6. عکرمہ ابن عباس (رض) سے روایت ہے کہ رسول کریم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے حضرت حسن اور حضرت حسین کا دو مینڈھوں سے عقیقہ فرمایا (یعنی دو مینڈھے عقیقہ میں ذبح فرمائے)۔ (سنن نسائی:جلد سوم:حدیث نمبر 528)
  7. حضرت یزید بن عبدالمزنی (رض) فرماتے ہیں کہ نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا لڑکے کی طرف سے عقیقہ کیا جائے اور (عقیقہ کا خون) لڑکے کے سر کو نہ لگایا جائے۔ (سنن ابن ماجہ:جلد سوم:حدیث نمبر 47)

About خاور رشید

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *