Home / شمارہ دسمبر 2017 / ضربِ کلیم۔۔۔ غلاموں کی نماز

ضربِ کلیم۔۔۔ غلاموں کی نماز

تمہارے اماموں کے طویل سجدے تمہاری فلاح و بہبود کے لیے نقصان دہ ہیں۔بعد از نماز ترکی مجاہد نے سوال کیا کہ تمہارے امام اتنے طویل سجدے کیوں کرتے ہیں؟

’’وہ اس بات سے بالکل بے خبر ہیں کہ مرد مجاہد اور مومن آزاد کی نماز کس طرح ہوتی ہے!‘‘

مرد مجاہد اور مومن آزاد کو تو دنیا میں ہزاروں کام ہوتے ہیں. اس کا تو ایک مقصد ہوتا ہے جس کے حصول کی جدوجہد میں وہ دن رات لگا رہتا ہے. غیر ضروری چیزیں اس کی “اہمیت کے دائرے” سے خارج ہوتی ہیں. اس مرد مجاہد اور مومن آزاد کی اسی جدوجہد کے باعث امتوں کا نظام ترقی کی جانب چلتا ہے۔

جبکہ تمہارا امام جو دراصل ایک ‘جسم غلام’ ہے. اس کی زندگی میں تو ٹھراؤ ہی ٹھہراؤ ہے اور اس کے دن رات ایک سے ہوتے ہیں. اسے وقت کی قدر و منزلت کا پتہ ہی نہیں ہوتا نا وہ جاننا چاہتا ہے. لہذا اگر وہ طویل سجدے کرتا ہے تو حیرانی کی کوئی  بات نہیں کیوں کہ اس غریب کے پاس اس کے سوا اور کام ہی کیا ہے۔

ان اماموں کے طویل سجدے امت کو اس بات سے غافل رکھتے ہیں کہ یہ امام کی امامت میں سجدے میں گم ہیں اور وہاں باطل کو کھلا موقع مل رہا ہے امت کی صفوں میں داخل ہو کر انتشار پھیلانے کا۔

دعا ہے کہ اللہ تعالی ان اماموں کو ایسے سجدے کرنے کی توفیق عطا فرمائے جس میں امت کی زندگی اور بھلائ کا پیغام ہو۔

 

 

About منصور الٰہی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *