Home / شمارہ ستمبر 2017 / میرا نام ہوجائے

میرا نام ہوجائے

غضب کا درد ٹپکا ہے

کسی کی مجبور آنکھوں سے

مگر مجھے کیا صاحب

کسی کے تڑپتے لاشوں سے

لمحہ بہ لمحہ رقصاں

موت کے تماشوں سے

میری بس چاہ اتنی ہے

مجھے تشہیر کرنی ہے

بنانی ہے وڈیو

عکس بند تصویر کرنی ہے

کہ اپنی وال پر ڈالوں

بہت سے لائکس اٹھالوں

ہوتی ہے تو کسی کی

عزت نیلام ہوجائے

یار دوستوں میں میرا

بس نام ہوجائے

از: صائم علی

 

About صائم علی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *