Home / شمارہ اگست 2018 /  کائنات

 کائنات

تحریر:ڈاکٹر فہد چوہدری

زمین

 Phanerozoic Eon

اس دور کی مثال آپ ایسے سمجھئے کہ اربوں سال سے چلنے والے سفر میں اب وہ موڑ آرہا تھا کہ زمین  رنگ رنگ، قسم قسم کی جانوروں، پودوں سے بھرنے والی تھی۔ زمین کے سناٹے اب مختلف بولیوں ، آوازوں سے گونجنے والے تھے۔ ۵۴۲ ملین سال قبل یہ دور شروع ہوا تھا اور ابھی تک ہم اسی میں زندگی گزار رہے ہیں۔ یہ ہی وہ دور ہے جس میں زندگی جیسی  آج ہم دیکھتے ہیں، پیدا ہوئی، پروان چڑھی اور مختلف تبدیلیوں سے ہوتی ہوئی اس حالت میں جس میں اسے آج ہم دیکھتے ہیں، آ موجود ہوئی۔  اس دور کو مزید تین ذیلی ادوار میں تقسیم کیا گیا ہے۔

Paleozoic

Mesozoic

Cenozoic

 گو کہ ان کا دورانیہ اس قدر نہیں ہے لیکن ان ادوار میں ہی اس قدر تبدیلیاں رونما ہوئیں کہ  ان ادوار کو مزید بھی چھوٹے چھوٹے  پیریڈز  میں بلحاظ ان تبدیلیوں کہ تقسیم کیا گیا ہے جس کا ذکر ساتھ ساتھ آئے گا۔ سب سے پہلے ذکر آتا ہے پیلیو زوئک کا

 

Paleozoic era

۵۴۲ ملین سال قبل سے ۲۵۱ ملین سال قبل اس میں مندرجہ ذیل چھ  پیریڈز ہیں جو اپنی اپنی مخصوص شناخت رکھتے ہیں

Cambrian period

Ordovician period

Silurian period

Devonian period

Carboniferous period

Permian period

کمبری این پیریڈ

 ۵۴۱ ملین سال قبل سے ۴۸۵ ملین سال قبل

اس عرصہ میں آج کے مقابلہ میں ۶۳ فیصد آکسیجن لیول زیادہ تھا۔  اوسط درجہ حرارت ۲۱ ڈگری   تک تھا۔ سمندری  کا لیول ۳۰ سے نوے میٹر تک تھا۔  پیریڈ کے شروع میں موسم سرد تھا مگر اس  پیریڈ کے اخیر تک درجہ حرارت بلند ہوتا رہا  اور  موسم خوشگوار ہوتا چلا گیا۔ درجہ حرارت کے زیادہ ہونے کے باعث گلیشئیر پگھلنے لگے تھے اور سمندری سطح بلند ہونے لگی۔  اس دور  میں  آبی  پودوں کی موجودگی بھی ظاہر ہوتی ہے لیکن ایسے پودے جن کو صحیح معنوں میں پودے  کہا جاتا ہے ، وہ موجود نہیں تھے۔

٭٭٭٭٭٭٭٭٭

About ڈاکٹر فہد چوہدری

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *