Home / شمارہ اگست 2018 / کسی کو اس کی غلطی کا احساس کیسے دلائیں؟

کسی کو اس کی غلطی کا احساس کیسے دلائیں؟

تحریر:مریم زیبا

 

کسی کو اس کی غلطی کا احساس کیسے دلائیں؟ خاص طور پر ایسے شخص کو جو بہت منفی ھے اور منفی پہلو پر ہی نگاہ گاڑے بیٹھا ہو؟

یہ احساس دلانا میری اور آپ کی اصل ذمہ داری نہیں ہے۔ ہماری اصل ذمہ داری اور فوکس ہے

ہمارے خیالات

ہماری سوچ

ہمارے جذبات

اور

ہمارا رویہ

اسی کے  ہم مکلف ہیں اور اسی کے لئے جوابدہ۔۔۔

دوسرے کے لئے اگر ہم کچھ کرسکتے ہیں تو وہ ہے

وما علینا الا البلاغ

یہ بات اللہ تعالی نے قرآن مجید میں بھی نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کو بار بارسمجھائی۔

اور ایک اہم نکتہ یہ ہے کہ جب انسان جذبات سے مغلوب ہوتا ہے تو اس کی عقل اور سوچنے سمجھنے کی صلاحیت ہالٹ پر ہوتی ہے۔

یعنی اس وقت وہ عاقل نہیں جاہل ہوتا ہے۔۔۔ اور جاہلوں کے لئے اللہ کا حکم ہے کہ

قالو سلاما

سلام کہہ کر علیحدہ ہونا۔ ان کو اپنے شر سے محفوظ رکھنا!اور خود کو ان کے شر سے محفوظ کرنا۔

جو بھی چیز وما علینا الا البلاغ کے حد کو کراس کرے وہ توازن سے ہٹ گئی۔

جب جذبات کے غلبے سے باہر آئے اور عقل و سوجھ بوجھ کے قابل ہوجائے تو ویلیڈیٹ کریں سنیں۔۔اپنے حوصلہ کے مطابق۔

عام طور پر سنانے سے زیادہ سننا، کسی بھی شخص کے لئے سمجھنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے، لیکچر دینے سے کہیں زیادہ کسی کے نقطہ نظر کو سمجھنا اس کے لئے مثبت تبدیلی کی راہ ہموار کرتا ہے۔۔۔! جب ہماری بات کوئی سمجھے اور سنجیدگی سے ہماری بات سنے تبھی ہمارے لیے نصیحت قبول کرنا آسان ہوتا ہے۔  اس لئے اگر خیرخواہی کرنی ہو تو پہلے سنیں۔۔۔

٭٭٭٭٭٭٭٭٭

About مریم زیبا

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *